Thursday, May 30, 2019

ورلڈ کپ کے پہلے میچ میں انگلینڈ نے جنوبی افریقہ 104رنز سے شکست دے دی



ورلڈ کپ کے پہلے میچ میں انگلینڈ نے جنوبی افریقہ 104رنز سے شکست دے دی


دنیائے کرکٹ کے سب سے بڑے ایونٹ کرکٹ ورلڈ کپ میں اوول کے گراونڈ میں ہونے والے افتتاحی میچ میں میزبان انگلینڈ نے جنوبی افریقہ کو104 رنز سے شکست دے دی۔
جمعرات کو ہونے والے میچ میں جنوبی افریقہ کو انگلینڈ نے 50 اوورز کھیل کر 311 رنز کا ہدف دیا۔
ہدف کےتعاقب میں جنوبی افریقہ کی بیٹنگ لائن شروع سے ہی مشکل کا شکار رہی اور پوری ٹیم چالیسویں اوور میں 207 رنز بنا کر آوٹ ہو گئی۔
ڈی کاک نے جنوبی افریقہ کی جانب سے سب سے زیادہ 68 رنز بنائے۔
آرچر نے تین ،پلنکٹ، سٹوکس نے دو دو ،جبکہ راشد اور معین علی نے ایک ایک کھلاڑی کو آوٹ کیا۔
ورلڈ کپ کے پہلے میچ میں کپتان مورگن انگلینڈ کی جانب سے 200ون ڈےکھیل کر 7000رنز بنانےوالے پہلے کھلاڑی بن گئے۔
سٹوکس نے عمدہ بیٹنگ کرتے ہوئے 89 رنز بنائے دیگر کھلاڑیوں میں جیسن رائے،جوئے روٹس،اور کپتان مورگن نے شاندار نصف سنچریاں بنائیں ۔
نگیدی نے تین،عمران طاہر،ربادا نے دو جبکہ فلیکوایو نے ایک وکٹ حاصل کی۔
سٹوکس 89 رنز پر نگیدی ،جیسن رائے 54رنز بنا کر فلیکوایو, جوئے روٹ 51رنز بنا کرربادا,مورگن57 اور بیرسٹو بغیر کوئی رنز بنائے عمران طاہر کی بال پر کیچ آوٹ ہوئے ۔
انگلینڈ نے بیٹنگ کا آغاز کیا تو دوسری ہی بال پر عمران طاہر نے انگلینڈ کی پہلی وکٹ حاصل کر کے بیٹنگ لائن کو مشکل میں ڈال دیا۔
ورلڈ کپ 2019کی پہلی وکٹ عمران طاہر نے اپنے نام کر لی
ورلڈ کپ کے اب تک ہونے والے گیارہ ایڈیشنز میں سے دونوں ٹیمیں چھ بار آمنے سامنے آئیں۔
 پہلی بار انگلینڈ اور جنوبی افریقہ کا 1992کے ورلڈ کپ میں ٹاکرا ہوا، جس میں ایک دلچسپ مقابلے کے بعد انگلینڈ نے جنوبی افریقہ کو شکست دی۔
 دوسری بار بھی 1992کے ورلڈ کپ میں انگلینڈ نے جنوبی افریقہ کو ڈھیر کیا۔
 تیسری اور چوتھی مرتبہ 1996 اور 1999 کے ورلڈ کپ میں جنوبی افریقہ کا پلڑا بھاری رہا اور اس نے انگلینڈ کو شکست دی۔
 پانچویں بار 2007کے ورلڈ کپ ایڈیشن میں بھی جنوبی افریقہ نے انگلینڈ کو پولین کی راہ دکھائی۔
 جبکہ چھٹی بار2011میں انگلینڈ نے کامیابی حاصل کی۔
 ماضی کے ریکارڈ کو دیکھا جائے تودونوں ٹیمیں برابر نظر آتی ہیں، مگر آئی سی سی کی رینکنگ میں انگلینڈ سب سے پہلے نمبر کی ٹیم ہے۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ میدان میں کون سی ٹیم کا پلڑا بھاری رہے گا 

0 Comments: